موضوعات ٹیگ ‘National Seminar’

PostHeaderIcon بہترحکمرانی اور موثر نظم و نسق کسی بھی حکومت کی اولین ذمہ داری


بہترحکمرانی اور موثر نظم و نسق
کسی بھی حکومت کی اولین ذمہ داری

ایم وی ایس ڈگری کالج محبوب نگر میں قومی سمینار

ایم وی ایس ڈگری کالج محبوب نگر میں قومی سمینار سے پروفیسر راجہ راتنم ،پروفیسر ایس اے ایم پاشاہ کا خطاب 

محبوب نگر(ای میل)ملک کی تعمیر نو کے لئے نظم ونسق عامہ کا کردار اہمیت کا حامل ہے نظم ونسق عوام کو بہتر خدمات اور سہولتیں فراہم کرتا ہے نظم ونسق کو آزادیانہ ،خانگیانہ اورعالمیانہ کے اس دور میں نئے نئے چیلنجز کا سامنا ہے لہذا اس مضمو ن کے جدید رحجانات سے واقف ہونا وقت کا اولین تقاضہ ہے
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon ایم وی ایس ڈگری کالج میں قومی سمینار : – ’’ نظم و نسق عامہ میں ابھرتے رحجانات ‘‘


ایم وی ایس ڈگری کالج محبوب نگر میں
7ستمبرکو قومی سمینار

بعنوان’’ نظم و نسق عامہ میں ابھرتے رحجانات ‘‘

پروفیسر راجہ رتنم،پروفیسر رحمت اللہ،پروفیسر پارتھا سارتھی ،پروفیسر ایس اے ایم پاشاہ و دیگر کی شرکت
محبوب نگر(ای میل)ڈاکٹر وی ۔گیتا نائیک کنوینر سمینارکی اطلاع کے بموجب شعبہ نظم و نسق عامہ ایم وی ایس گورنمنٹ ڈگری و پی جی کالج(خودمختار) محبوب نگر کے زیراہتمام بہ تعاون قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان نئی دہلی اور بہ اشتراک علاقائی مرکزبرائے شہری و ماحولیاتی مطالعات جامعہ عثمانیہ حیدرآباد کی جانب سے ایک روزہ قومی سمینار بعنوان’’ نظم و نسق عامہ میں ابھرتے رحجانات ‘‘کا 7ستمبر2017ء بروزجمعرات صبح 10 بجے آغازعمل میں آئےگا۔
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon قومی سمینار ۔ علی جواد زیدی:فن اور شخصیت :- عزہ معین

قومی سمینار
علی جواد زیدی ۔ فن اور شخصیت
علی جواد زیدی نےاپنی زندگی کو قومی ایکتا کے لئے وقف کیا

رپورٹ : عزہ معین
سنبھل

ایم جی ایم پی جی کالج سنبھل میں اتر پردیش اردو اکادمی لکھنؤ کے مالی تعاون سے ایک نیشنل سیمنار بعنوان ’’علی جواد زیدی فن اور شخصیت‘‘ ۲ مئی کو منعقد کیا گیا ۔ اس سیمنار میں شرکت کے لئے چودھری چرن سنگھ یونیورسٹی ccu میرٹھ اردو ڈپارٹمنٹ کے صدر اسلم جمشید پوری نے کہا کہ علی جواد زیدی کی ادبی خدمات کو ہمیشہ یاد کیا جائیگا کیونکہ وہ جہاں کہیں بھی رہے بھائی چارے اور ہندوستانیت کی پہچان بنے ۔ان کے کارناموں سے ملک کانظام مضبوط ہوا ۔
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon قومی سمینار: راجندرسنگھ بیدی اورعصمت چغتائی – – – رافد اُویس بٹ

عصمت چغتائی
شعبۂ اردو، یونی ورسٹی آف حیدرآباد کی جانب سے
دو روزہ قومی سمینار

’’ راجندر سنگھ بیدی اور عصمت چغتائی:ترقی پسند تحریک کے تناظر میں‘‘
”RAJINDER SINGH BEDI AND ISMAT CHUGHTAI :
IN PERESPECTIVE OF PROGRESSIVE WRITERS MOVEMENT”

رپورتاژنگار: رافد اُویس بٹ
ریسرچ اسکالر، شعبۂ اردو، یونی ورسٹی آف حیدرآباد

شعبۂ اردو،یونی ورسٹی آف حیدرآباد کی جانب سے مورخہ ۸؍اور ۹؍ فروری ۲۰۱۷ء کو اردو فکشن کے دواہم ستون راجندر سنگھ بیدی اورعصمت چغتائی پر دوروزہ قومی سمینار بعنوان’’راجندرسنگھ بیدی اورعصمت چغتائی: ترقی پسند تحریک کے تناظر میں‘‘ کا انعقاد کیا گیا۔ پہلے روز،افتتاحی اجلاس کے بعد دو تکنیکی اجلاس ہوئے، جن میں عصمت پر ۱۰؍ مقالے پڑھے گئے۔افتتاحی اجلاس میں پروفیسر پنچانن موہنتی، ڈین اسکول آف ہیومانٹیز، یونی ورسٹی آف حیدرآباد نے مہمانوں کا خیرمقدم کرتے ہوئے سمینار کی کوآرڈینیٹر ڈاکٹرعرشیہ جبین صاحبہ کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ منعقدہ سمینارعصمت اور بیدی کی تخلیقات کو نئے تناظر میں دیکھنے اور پرکھنے کی بہترین کوشش ہے۔
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon این ٹی آرکالج محبوب نگرمیں قومی سمینار- وائس چانسلرپروفیسربی راجارتنم کاخطاب


عصر حاضر میں خواتین کو
تصنیف و تالیف کی طرف زیادہ سے زیادہ متوجہ کرنا وقت کا اہم تقاضہ
پالموروو یونیورسٹی میں جلدازجلد اردو کے شعبہ کے قیام کیلئے کوشش

این ٹی آر ڈگری کالج محبوب نگر میں قومی سمینار
وائس چانسلر پروفیسر بی راجا رتنم، پروفیسر مظفرعلی شہ میری و دیگر کا خطاب

محبوب نگر ۔(ای میل) علم وادب کے میدان میں خواتین ترقی کررہی ہیں اور اپنی صلاحیتوں سے ترقی کے زینہ طئے کررہی ہیں ۔ ادب کے میدان میں انہیں تصنیف و تالیف کی جانب توجہ دلانا وقت کا اہم تقاضہ ہے ان خیالات کا اظہارپروفیسر بی راجا رتنم،وائس چانسلر،پالمور یونیورسٹی محبوب نگرنے این ٹی آر ڈگری کالج محبوب نگر میں منعقدہ قومی سمینار ’’غیر افسانوی ادب کے فروغ میں خواتین کا حصہ‘ سے کیا انہوں نے کہا کہ اردو زبان نے آزادی ہند کی جدوجہد میں اہم رول ادا کیا ہے ،اردو دراصل ایک تہذیب و تمدن کا نام ہے اور قومی یکجہتی کے فروغ میں اردوکا نمایا ں رول رہا ہے
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon قومی سمینار:غیرافسانوی ادب میں خواتین قلم کار۔ ۔ ۔ ۔ ڈاکٹرحمیرہ سعید

NTR College غیرافسانوی
جنوری کو این ٹی آر گورنمنٹ ڈگری کالج محبوب نگر میں قومی سمینار
مختلف یونیورسٹیوں سے پروفیسر س اور اسکالر کی شرکت

محبوب نگر ۔(ای میل) ڈاکٹر حمیرہ سعید صدر شعبہ اردو این ٹی آر ڈگری کالج محبوب نگر کی اطلاع کے بموجب 5جنوری2017ء بروز جمعرات این ٹی آرگورنمنٹ ویمنس ڈگری کالج محبوب نگر میں ایک روزہ قومی سمینار کا انعقاد عمل میں لایاجارہا ہے۔اس سمینار کا موضوع ’’غیر افسانوی ادب کے فروغ میں خواتین کا حصہ‘‘دیا گیا ہے ۔
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon شاتا واہنا یونیورسٹی کریم نگرمیں قومی سمینارکاانعقاد – – – ڈاکٹرمحمد اسلم فاروقی

sem-image شاتا
شاتا واہنا یونیورسٹی کریم نگر تلنگانہ
’’اردو کی نثری اصناف‘‘ قومی سمینارکاانعقاد

رپورتاژ: ڈاکٹرمحمد اسلم فاروقی
صدر شعبہ اردو گری راج کالج ۔نظام آباد تلنگانہ اسٹیٹ

ہندوستان میں اعلیٰ تعلیم کے فروغ کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ اکیسویں صدی کے پہلی دہائی میں شہروں کے علاوہ اضلاع اور علاقائی سطح پر یونیورسٹیوں کا قیام عمل میں آیا ہے۔ تلنگانہ میں شہر حیدرآباد میں جامعہ عثمانیہ ‘مولانا آزاد ‘سنٹرل یونیورسٹی‘امبیڈکر یونیورسٹی‘نلسار یونیورسٹی وغیرہ قائم ہیں۔ لیکن اب اضلاع کریم نگر‘نظام آباد‘نلگنڈہ اور محبوب نگر میں بھی ریاستی یونیورسٹیاں قائم ہوگئی ہیں اور وہاں کے شعبہ جات اپنی کارکردگی کے سبب مشہور ہورہے ہیں۔
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon سمینار: مولانا حالیؔ کی نا قابل فراموش ادبی خدمات ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ رپورتاژ: ڈاکٹرعزیزسہیل

Haali حالیؔ
کہکشاں کلچرل اینڈ لٹریری سوسائٹی نظام آباد
قومی سمینار: مولاناحالیؔ کی نا قابل فراموش ادبی خدمات

از: ڈاکٹرعزیزسہیل
لیکچرار ،ایم وی ایس گورنمنٹ ڈگری کالج محبوب نگر

ضلع نظام آباد اردو ادب کے فروغ و اشاعت کیلئے تلنگانہ میں کافی ذرخیز علاقہ تصور کیا جاتا ہے جہاں اسکول ، کالج اور یونیورسٹی کی سطح پر اردو ذریعہ تعلیم کا نظم ہے سیکڑوں طلباء و طالبات اپنی مادری زبان میں تعلیم حاصل کرتے ہوئے ترقی کی منزلیں طئے کررہے ہیں یہاں اردو زبان و ادب کے فروغ میں بہت سی انجمنیں اور سوسائٹیز اپنی گراں قد رخدمات انجام دئے رہی ہیں ان اداروں میں ایک باوقار ادارہ کہکشاں کلچرل اینڈ لٹریری سوسائٹی بھی ہے جس نے اردو کے فروغ اور اسکی ترقی و ترویج کے لئے خودکو وقف کردیاہے۔کہکشاں کلچرل اینڈ لٹریری سوسائٹی نظام آبادکی ایک رجسٹرڈ سوسائٹی ہے جس کا قیام آج سے 22سال قبل عمل میں آیاتھاتب سے لیکر آج تک سوسائٹی کے زیر اہتمام بے شمار کل ہند مشاعرے،بین الریاستی مشاعرے ،ادبی اجلاس اور ،سمینار کا انعقاد عمل میں لایا جاتا رہا ہے،سوسائٹی نے 90سے زائد نئے شعراء کو اپنے پلیٹ فارم سے متعارف کروایا ہے۔ڈاکٹر ضامن علی حسرت ممتاز ادیب و شاعرہونے کے ساتھ ساتھ اس سوسائٹی کے کامیاب کنوینر بھی ہیں ان ہی کی کاؤشوں کی بدولت اس ایک روزہ قومی سمینار کا انعقاد عمل میںآیا۔
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon حالی اورشبلی اردوادب کے دو روشن دماغ – – – تلنگانہ یونیورسٹی میں اردوسمینار

telengana

حالی اور شبلی اردو ادب کے دو روشن دماغ

شعبہ اردو تلنگانہ یونیورسٹی کے زیر اہتمام دوروزہ قومی اردو سمینار
ڈاکٹرسید تقی عابدی اورپروفیسر مظفرعلی شہہ میری کا خطاب

نظام آباد : حالی اور شبلی ہندوستان ہی کے نہیں بلکہ عالمی سطح کے دو روشن دماغ ہیں۔سرسید کے ان رفقائے کاروں نے انیسویں صدی میں خواب غفلت میں ڈوبی قوم کو اپنی تحریروں سے جگایا اور اپنے شعری و ادبی کارناموں سے نہ صرف اپنے دور کو بلکہ آنے والے زمانے میں بھی لوگوں کو سماجی اور تہذیبی مسائل کے حل کی راہ دکھائی۔ آج ضرورت اس بات کی ہے کہ حالی اور شبلی کی فکر کو عام کیا جائے اور عہد حاضر کی تہذیبی وسماجی زندگی میں ان کے افکار اور کارناموں سے روشنی حاصل کی جائے۔
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon جامعہ کرناٹک دھارواڑمیں جوش ملیح آبادی پرسمینار ۔ ۔ ۔ ۔ مہرافروز

جوش سمینار

جامعہ کرناٹک دھارواڑمیں جوش ملیح آبادی پرسمینار

رپورٹ: مہرافروزکا ٹھیواڑی
صدر شعبہء انگریزی ضلع تربیتی و تعلیمی ادارہ ڈایٹ دھارواڑ.کرناٹک

جوش ملیح آبادی…. ایک نام جس کے ساتھ کئی داستانیں جڑی ہیں. جوش ملیح آبادی کو پڑھنا اور جاننا گویا ایک عہد اور زمانے کو جاننا اور بحث کرنا ہے
یوں تو جامعہ کرناٹک مختلیف النوع علوم کی دنیا بھر میں مشہورایک قدم ترین درس گاہ ہے جس کا اپنا ایک وقاراورتاریخ ہے… یہاں کے شعبہ اردو اور فارسی نے کئی سمینارس کا اہتمام کیا ہے مگر جوش پر کبھی کوئی سمینار سرزمین دھارواڑ پر نہیں ہوا تھا ۔
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon دکن میں ڈاکٹرعلی احمد جلیلی کی ادبی خدمات۔ سمینار

علی احمد جلیلی

ایک روزہ قومی سمیناسر و مشاعرہ
دکن میں ڈاکٹر علی احمد جلیلی کی ادبی خدمات

DR.ALI AHMED JALEELI LITERATURE WORK IN DECCAN
بتاریخ10مئی2015ء بروز اتوار ‘بمقام: محبوب نگر
بہ تعاون:قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان‘ نئی دہلی
زیر اہتمام:عابد علی خاں میموریل اکیڈیمی محبوب نگر
شہر محبوب نگر :
شہرمحبوب نگر قدیم زمانے سے گنگا جمنی تہذیب کا گہوارہ رہا ہے۔اس شہر کا سابقہ نام پالمورو تھاجس کو بعد میں تبدیل کرتے ہوئے محبوب نگر آصف سادس میر محبوب علی خان کے نام سے منسوب کردیا گیا۔ریاست تلنگانہ وآندھرا پردیش کے تاریخی مقامات میں محبوب نگر اپنی ایک علحدہ شناخت رکھتا ہے۔ریاست آندھرا پردیش سے جوڑا یہ ضلع ریاست تلنگانہ کا رقبہ اور آبادی کے لحاظ سے ایک بڑا ضلع ہے۔ یہ شہر ہمہ
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon مسلمانوں میں بہترین پروفیشنلس پیدا کرنے پر زور- مانو میں سمینار

DSC_0076

DSC_0073

DSC_0056
مسلمانوں میں بہترین پروفیشنلس پیدا کرنے پر زور
اردو یونیورسٹی میں آئی ڈی بی سمینارکا آغاز
حیدرآباد، 6؍ مارچ(پریس نوٹ) مسلمانوں میں بہترین پروفیشنلس کی تیاری کے مقصد کے تحت جدہ کے اسلامک ڈیولپمنٹ بینک (آئی ڈی بی) اور دہلی کے مسلم ایجوکیشن ٹرسٹ کی جانب سے مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی میں آج چار روزہ سمینار کا آغاز عمل میں آیا۔ اس سمینار میں تقریباً 150 طلبہ جنہوں نے آئی ڈی بی کے اسکالر شپ پروگرام سے استفادہ کیا ہے، شرکت کر رہے ہیں۔ یہ طلبہ اتر پردیش، اتراکھنڈ، مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ سے تعلق رکھتے ہیں۔ مانو اور مسلم ایجوکیشنل سوشیل اینڈ کلچرل آرگنائزیشن (میسکو) کے باہمی تعاون سے اس سمینار جس کا عنوان ’’امن ، ترقی اور خوشحالی کے لیے ایک روڈ میاپ‘‘ ہے منعقد کیا جارہا ہے۔ جناب محمد امان اللہ خان ، صدر نشین، ایم ای ٹی نے کہا کہ ہندوستان بھر سے 5,000 طلبہ نے آئی ڈی بی کے اسکالر شپ اسکیم سے اب تک استفادہ کیا ہے۔ اس اسکیم کے تحت انجینئرنگ اور میڈیسن کے طلبہ کو قابل لحاظ اسکالر شپ دی جاتی ہے۔ جناب ظفر جاوید انچارج آئی ڈی بی پراجیکٹس نے کہا کہ 1980 کے دہے کی ابتداء میں آئی ڈی بی نے ہندوستان میں 30 ملین امریکی ڈالر سے اس اسکیم کا آغاز کیا جس کے تحت طلبہ کو اسکالر شپ اور پراجیکٹس کی تکمیل میں مدد فراہم کی جاتی ہے۔بعد ازاں اس رقم میں مزید 30 ملین امریکی ڈالر
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon اُردو یونیورسٹی میں ایجوکیشنل ڈیولپمنٹ سمینار

manu

اُردو یونیورسٹی میں ایجوکیشنل ڈیولپمنٹ سمینار
حیدرآباد، 4؍ مارچ(پریس نوٹ) مولانا آزاد نیشنل اُردو یونیورسٹی میں مسلم ایجوکیشنل سوشل اینڈ کلچرل آرگنائزیشن (میسکو) کے تعاون سے اسلامک ڈیولپمنٹ بینک اور مسلم ایجوکیشن ٹرسٹ کا سمینار بعنوان ’’امن ، ترقی اور خوشحالی کے لیے ایک روڈ میاپ‘‘ 6 تا 9 ؍ مارچ 2015ء سی پی ڈی یو ایم ٹی آڈیٹوریم میں منعقد ہوگا۔ افتتاحی اجلاس 6؍ مارچ جمعہ کو 10 بجے صبحمنعقد ہوگا، جس کی صدارت پروفیسر محمد میاں، وائس چانسلر کریں گے۔ جناب اے کے خان، ڈائرکٹر جنرل، اینٹی کرپشن بیورو، حکومت تلنگانہ مہمانِ خصوصی ہوں گے۔ ڈاکٹر خواجہ محمد شاہد، پرو وائس چانسلر، مانو، ڈاکٹر فخر الدین محمد، اعزازی سیکریٹری، میسکو، حیدرآباد، جناب ظفر جاوید، سی پی او، حیدرآباد، جناب ملک معتصم خان، سابق امیرِ حلقہ، جماعت اسلامی، آندھرا پردیش، پروفیسر ایس ایم رحمت اللہ، رجسٹرار انچارج، مانو اور جناب امان اللہ خاں، صدر نشین مسلم ایجوکیشن ٹرسٹ ، نئی دہلی مہمانانِ اعزازی ہوں گے۔
عابد عبدالواسع – پبلک ریلیشنز آفیسر

PostHeaderIcon دو روزہ قومی سیمینار بہ عنوان اردو ادب میں قومی یک جہتی کے عناصر

IMG_2140

IMG_2025

IMG_2002

IMG_2013

IMG_2175

IMG_2209

IMG_2161
دو روزہ قومی سیمینار بہ عنوان اردو ادب میں قومی یک جہتی کے عناصر
یر اہتمام دکن مسلم انسٹی ٹیوٹ بہ اشتراک قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان ، نئی دہلی
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon پونے میں دو روزہ قومی سیمینار’’اردو ادب میں قومی یک جہتی کے عناصر‘‘

institute_of_pharmacy_pune

97_pune-azam-campus

invitation for seminar

دکن مسلم انسٹی ٹیوٹ، پونے کے زیر اہتمام دو روزہ قومی سیمینار
بہ عنوان ’’اردو ادب میں قومی یک جہتی کے عناصر‘‘
بہ اشتراک قومی کونسل برائے فروغِ اردو زبان، نئی دہلی
۲۷ ، ۲۸ ؍فروری ۲۰۱۵-بمقام: ہائی ٹیک ہال، اعظم کیمپس، پونے
افتتاحی تقریب
بروز جمعہ ۲۷؍فروی ۲۰۱۵ وقت: سہ پہر۳۰:۳ تا شام ۳۰:۵ بجے
تلاوت قرآن : مفتی احمد قاسمی
استقبالیہ کلمات : ممتاز سید، اعزازی سیکریٹری، کن مسلم انسٹی ٹیوٹ ، پونے
سیمینارکے اغراض و مقاصد : عظمیٰ تسنیم، سیمینار کوآرڈینیٹر
تعا رف مہمانان وہدیہ تہنیت : عظمت دلال، اسسٹنٹ پروفیسر اردو
تقریرمہمان اعزازی : جناب پی۔اے۔ انعامدار، ممبرقومی کونسل برائے فروغِ اردو زبان، نئی دہلی
تقریرمہمان خصوصی : پروفیسر اختر الواسع، قومی کمشنر برائے اقلیتی لسانیات، نئی دہلی
صدارتی تقریر : محترمہ عابدہ انعامدار، صدر ،دکن مسلم انسٹی ٹیوٹ ، پونے
ہدیۂ تشکر :
دوسرا دن بروز سنیچر۲۸ ؍فروری۲۰۱۵
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon فرد اور معاشرہ کی تبدیلی دراصل سماجی علوم کے ذریعہ سے ہی ممکن

DSC_9180

photo 2 (5)

photo 1 (3)

photo 1 (6)

فرد اور معاشرہ کی تبدیلی دراصل سماجی علوم کے ذریعہ سے ہی ممکن
محبوب نگر میں قومی سمینار سے پروفیسر باگیہ نارائن،پروفیسر اکبر علی خاں اور پروفیسر کانچا ایلیاکا خطاب
محبوب نگر(راست) ملک و ریاست کی ترقی اور فرد کی تعمیر و تشکیل میں سماجی علوم کا کردار بہت زیادہ اہمیت کا حامل ہے ہم سماجی علوم کو نظر انداز کئے بغیر بہتر معاشرہ کی تشکیل کا تصور نہیں کرسکتے،دورحاضر میں سائنس و ٹکنالوجی کی ترقی نے بے شمار تبدیلیاں پیدا کردی ہے جس کی وجہہ سے گلوبلزیشن کا تصور فروغ پایا ہے ان خیا لات کا اظہار پروفیسرمحمد اکبر علی خان سابق وائس چانسلر تلنگانہ یونیورسٹی نظام آباد وڈین فیکلٹی آف کامرس عثمانیہ یونیورسٹی نے 23 فروری بروز پیر شعبۂ سماجی علوم(اردو میڈیم) ایم وی ایس گورنمنٹ ڈگری و پی جی کالج محبوب نگر کے زیراہتمام بہ اشتراک قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان نئی دہلی منسٹری آف ہومین ریسورس گورنمنٹ آف انڈیا کی جانب سے ایک روزہ قومی سمینار بعنوان’’ موجودہ دور میں سماجی علوم کی اہمیت مسائل وامکانات‘‘سے امبیڈکر اڈیٹوریم ہال میں کیا انہوں نے مزید کہا کہ عصر حاضر میں عالمیانہ کے تصورنے کافی اہمیت حاصل کی ہے
مزید پڑھیں »

PostHeaderIcon ہندوستانی مسلمانوں کے لیے ’’دستاویزِ پالیسی‘‘ وضع کرنے کی ضرورت

PVC

ہندوستانی مسلمانوں کے لیے ’’دستاویزِ پالیسی‘‘ وضع کرنے کی ضرورت
اقلیتوں کی تعلیمی ترقی پر سمینار کا اختتام۔ ڈاکٹر خواجہ محمد شاہد اور پروفیسر رحمت اللہ کا خطاب
حیدرآباد ، 12؍ فروری (پریس نوٹ) ہندوستان میں مسلم برادری کے مطالبات اور ان کی تکمیل کے لیے کی جانے والی پالیسی پہل کو وضع کرنے میں ایک حوالے کے طور پر کام آنے والے ٹھوس ’’دستاویزِ پالیسی‘‘ کی ضرورت ہے۔ ڈاکٹر خواجہ محمد شاہد، پرو وائس چانسلر مولانا آزادنیشنل اردو یونیورسٹی نے کل قومی سمینار بعنوان ’’اقلیتوں کی تعلیمی ترقی : پالیسی، اقدامات اور اثرات‘‘ کے اختتامی اجلاس سے بحیثیت مہمانِ خصوصی خطاب کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا۔ دو روزہ قومی سمینار کا انعقاد شعبۂ سیاسیات و نظم نسق عامہ نے وزارت اقلیتی امور کے جزوی تعاون سے کیا۔ ڈاکٹر ایس ایم رحمت اللہ، رجسٹرار و انچارج ڈین اسکول آف آرٹس و سوشل سائنسس نے صدارت کی۔ ڈاکٹر خواجہ شاہد نے سلسلہ تقریر جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ہندوستان چونکہ ایک سیکولر ملک ہے یہاں اقلیتی تعلیمی ادارے قائم نہیں کیے جاسکتے۔ تاہم اقلیتوں کے لیے تعلیمی اداروں کے قیام کے راستے موجود ہیں۔ ہندوستان کے مسلمان حکومت کی تعلیمی پالیسیوں سے استفادہ کے خواہاں ہیں۔ مسلمانوں میں حصولِ تعلیم کی خواہش کم نہیں ہے۔ مسلمانوں کو تعلیم کی اہمیت بتانے کی چنداں ضرورت نہیں ہے وہ اس سے بخوبی واقف ہیں۔ ہم اس میدان میں کسی اور سے پیچھے نہیں رہ سکتے۔ ڈاکٹر خواجہ شاہد نے منتظمین کو مشورہ دیا کہ سمینار کی سفارشات، پالیسی منصوبہ بندی کے مرحلے تک پہنچائی جائیں۔ یہی ہماری کامیابی ہوگی۔ پروفیسر ایس ایم رحمت اللہ نے اپنی تقریر میں سمینار کے کامیاب انعقاد پر منتظمین کو مبارکباد دی اور کہا کہ ’’قومی قبائلی دستاویز‘‘ کے خطوط پر ’’قومی اقلیتی دستاویز‘‘ تیار کرنے کی ضرورت ہے۔ ہم صرف کسی مخصوص گروپ یا طبقے کی تعلیمی ترقی کی بات نہیں کر رہے ہیں بلکہ یہ مسئلہ متنوع انسانی وسائل سے مربوط ہے۔ دستور سازوں کی ستائش کرتے ہوئے پروفیسر رحمت اللہ نے بتایا کہ وہ اس تنوع سے بخوبی واقف تھے۔ حکومت کی جانب سے تشکیل کردہ مختلف کمیٹیوں کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایسی ہی ایک سچر کمیٹی کے ذریعہ ہمیں ہندوستانی مسلمانوں کی پسماندگی کا پہلی مرتبہ باضابطہ طور پر پتہ چلا۔ انہوں نے سمینار کے مالی تعاون کے لیے وزارت اقلیتی امور کا بھی شکریہ ادا کیا۔ ابتداء میں ڈاکٹر کنیز زہرا، صدر شعبۂ سیاسیات و نظم و نسق عامہ و کو آرڈینیٹر سمینار نے خیر مقدم کیا۔ انہوں نے سمینار کے اغراض و مقاصد بھی بیان کیے۔ ڈاکٹر سید نجی اللہ، آرگنائزنگ سکریٹری و اسسٹنٹ پروفیسر نے کلمات تشکر ادا کیے۔

PostHeaderIcon مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی میں اقلیتوں کی تعلیمی ترقی پر سمینار

Guest

ملی جلی تہذیب اور تنوع ہی ہندوستانی سماج کی سب سے بڑی طاقت
کیرالا کے شمولیاتی ماڈل کی ستائش۔ اردو یونیورسٹی میں اقلیتوں کی تعلیمی ترقی پر سمینار۔ پروفیسر کنڈو کا کلیدی خطبہ
حیدرآباد ، 10؍ فروری (پریس نوٹ) تہذیبی تنوع اور کثرت میں وحدت ہی ہندوستان کی طاقت ہے۔ یہ ہماری کمزوری نہیں ہے۔ 21 ویں صدی ہندوستان کی ہے۔ تاہم ہر سطح پر شمولیاتی ترقی کے بغیر ہندوستان کی ترقی ممکن نہیں ہے۔ ان خیالات کا اظہار پروفیسر امیتابھ کنڈو، ڈائرکٹر، سنٹر فار اسٹڈی آف ریجنل ڈیولپمنٹ و صدر نشین مابعد سچر جائزہ کمیٹی نے آج مولانا آزادنیشنل اردو یونیورسٹی میں ایک قومی سمینار کے افتتاحی اجلاس میں بحیثیت مہمانِ خصوصی کلیدی خطبہ پیش کرتے ہوئے کیا۔ دو روزہ سمینار ’’اقلیتوں کی تعلیمی ترقی : پالیسی، اقدامات اور اثرات‘‘ کا اہتمام شعبۂ سیاسیات و نظم و نسق عامہ، اردو یونیورسٹی نے وزارت اقلیتی امور، حکومت ہند کے تعاون سے کیا ہے۔ افتتاحی اجلاس کی صدارت ڈاکٹر خواجہ محمد شاہد، پرو وائس چانسلر نے کی۔ ڈاکٹر فضل غفور، صدر مسلم ایجوکیشنل سوسائٹی، کالی کٹ، کیرالا مہمانِ اعزازی تھے۔ پروفیسر کنڈو نے سلسلہ خطاب جاری رکھتے ہوئے کہا کہ طبقاتی اور علاقائی سطح پر اگر عوامی امنگوں کی تکمیل نہیں کی گئی تو ہندوستان کی ترقی متاثر ہوگی۔ انہوں نے گجرات کے
مزید پڑھیں »

سوشل میڈیا



تلاش
آپ کی رائے؟

جہان اردو کا کونسا/کونسے ورژن آپ ملاحظہ فرماتے ہیں؟

  • نوٹ :ایک سے زائد جواب دینے کی گنجائش ہے

View Results

Loading ... Loading ...
اردو آمیز- طریقہ کار
اگر آپ کو جہان اردو کا نستعلیق میں مشاہدہ کرنا ہو یا اپنے کمپیوٹر پر اردو میں ٹائپ کرنا چاہتے ہیں؟ہاں؟! تو یہاں سے نستعلیق فونٹ اور کی بورڈ ( کلیدی تختہ ) ڈاؤن لوڈ کریں ِ

Windows XP اور Windows 7 اردو آمیز کرنے کا طریقہ کار
موبائل ایپ – Apps
Download from Amazon App Store
Scan the QR-Code to download Android App
Scan the QR-Code to download iPhone App
محفوظات
مقبول ترین مضامین
جہان اردو تاریخی آئینے میں
  • 2016-09-22 No articles on this date.
نیوز لیٹر
نئے مضامین آنے پر مطلع ہونا چاہتے ہیں؟ اگر ہاں!تو اس فارم کو پُر کریں۔
محفوظات
↓